google.com, pub-5807984973476958,DIRECT,f08c47fec0942fa0
نماز جنازہ ابھی کھڑا ہی تھے کہ ایک شخص نے کہاں میں نے اس 15 لاکھ روپے لینے ہیں پہلے پیسے دو

گھر والوں سے پوچھا گیا تو انہوں نے کہا ہمیں پتہ ہی نہیں مرنے والے تو ہمیں کچھ بھی نہیں بتایا کی اس نے کسی کا قرض دینا ہے۔مرنے والے کے بھائیوں نے کہا کہ ہمیں جب پتہ نہیں تو پھر ہم کیسے دیں۔جب بہت زیادہ دیر ہوچکی رو ایک بوڑھی عورت کو یہ بات پتہ چلی تو وہ اپنا سارا زیور لیکر وہ پہنچ گئی ۔یہ مرنے والے کی ایک اکلوتی بہن تھی۔اور بہن تھی ۔اس نے اپنی جمع شدہ رقم اور زیور سارا کچھ اکھٹا کرکے اس شخص کو بھجوا دی جو پیسے لینے کا دوا کر رہا تھا۔اس بیٹی نے کہا کہ یہ بیچ کر آپ اپنے پیسے پورے کر لینا اور اب میرے ابو کا جنازہ پڑھنے دیں ۔جب اس شخص نے دیکھا کہ اس کو رقم مل گئی ہے تو وہ چارپائی کو چھوڑ کر کھڑا ہوگیا اور اس نے مجمع کو مخاطب کرکے کہنے لگا کہ میں اصل میں اس شخص سے پیسے لینے نہیں بلکہ دینے ہیں ۔اور میں اس اصل وارث دھونڈ رہا تھا۔

By admin

Leave a Reply

error

Enjoy this blog? Please spread the word :)