سکولوں کی رونقیں بحال ہوگئی پرائمری سکول کھول گئے

سکول انتظامیہ اور عملہ سے گزارش ہے کہ وہ Coid_19 کے بتائے ہوئے ایس-او-پیز لر عمل کریں ۔تاکہ بچوں کی صحت برقرار رکھی جائے

سکول کھلنے کا تیسرا مرحلہ شروع ہوگیا،کورونا کیسز میں کمی ہوتےہی آج سےملک بھر کے پرائمری تعلیمی ادارےبھی کھول دیئےگئے۔ سکول آنے والے بچوں کو دو گروپس میں تقسیم کیا گیا ہے ایک دن چھٹی اگلے دن حاضری ہو گی، ضلع لاہورکےدوہزارپرائمری سکولوں میں چھ لاکھ سے زائدبچےزیرتعلیم ہیں، جنہیں متبادل دنوں میں سکول بلایاجائےگا۔ پبلک سکولوں میں کوروناایس اوپیزپرعملدرآمدکرانے کے لئےانتظامیہ کی سو فیصد گرفت نظر نہ آئی۔

لاہور کے 500 سرکاری اور 1200 پرائیویٹ سکولوں کے پرائمری سیکشنز میں تدریس کا آغاز ہوچکا ہے،تیسرے مرحلے میں نرسری سے پانچویں کے بچے سکول آئیں گے،ماسک کے بغیر کسی بچے کو سکول داخل ہونے کی اجازت نہیں، پنجاب بھرمیں پرائمری سکولوں کی تعداد 35000 سے زائدہے۔

سکولوں کےباہرچھٹی کےوقت بھی سکول انتظامیہ بچوں کوایس اوپیزپرعملدرآمدکروانے میں ناکام دکھائی دی ۔چھٹی کےوقت نہ صرف طلباء بلکہ انھیں لینے کیلئے آئے ہوئے والدین نے بھی معاشرتی فاصلہ قائم نہ رکھا۔تعلیمی سرگرمیاں بحال ہونےپرجہاں طلباء خوش ہیں وہیں والدین نےبھی سکھ کا سانس لیا ہے، تاہم انتظامیہ کی ذمہ داری ہے کہ وہ ایس او پیز کا خصوصی خیال رکھتے ہوئے بچوں کیلئے حفاظتی اقدامات یقینی بنائے۔

By admin

Leave a Reply

error

Enjoy this blog? Please spread the word :)